Asif Ali Zardari and his sister Faryal Talpur arrested by NAB 77

آصف علی زرداری اسلام آباد سے گرفتار

اسلام آباد ہائیکورٹ نے میگا منی لانڈرنگ کیس میں آصف علی زرداری اور فریال تالپور کی درخواست ضمانت کی درخواست مسترد کر دی۔ عدالت نے نیب کو دونوں رہنماؤں کو گرفتار کرنے کی اجازت دے دی۔ آصف علی زرداری کی ضمانت میں تقریباََ 5 بار توسیع ہوئی، وہ 2 ماہ 12 دن عبوری ضمانت پر رہے لیکن آج ان کی ضمانت کی درخواست مسترد ہو گئی، جبکہ اب یہی خبر ہے کہ نیب نے آصف علی ذرداری کو گرفتار کر لیا ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے دو رکنی بینچ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن کیانی نے میگا منی لانڈرنگ کیس کا مختصر فیصلہ سنایا۔ نیب پراسیکیوٹر جہانزیب بھروانہ نے اپنے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ میں صرف 20 منٹ دلائل دوں گا، جس پر عدالت نے ریمارکس دیئے کہ آپ تو دلائل دے چکے، یہ ضمانت ہے، سزا کیخلاف اپیل نہیں۔ نیب پراسیکیوٹر نے کہا کیس کی ایف آئی آر میں 29 اکاؤنٹس ٹریس ہوئے، میگا منی لانڈرنگ کیس میں ساڑھے 4 ارب روپے سے زائد کی ٹرانزیکشنز ہوئیں، اے ون انٹرنیشنل، عمیر ایسوسی ایٹس سے اربوں کی ٹرانزیکشنز ہوئی، اکاؤنٹس کیساتھ زرداری گروپ اور پارتھینون کمپنیوں کی ٹرانزیکشن ہوئی، یہ 29 میں سے صرف ایک اکاؤنٹ کی تفصیل ہے، دیگر 28 اکاؤنٹس کی تفتیش جاری ہے، آصف زرداری کی درخواست ضمانت ناقابل سماعت ہے۔ لہذا انکی گرفتاری کی نیب کو اجازت دی جائے تاکہ میگا منی لانڈرنگ کیس کو منطقی انجام تک پہنچایا جا سکے۔

سابق صدر آصف علی زرداری کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے اپنے جوابی دلائل میں کہا کہ چیئرمین نیب کے پاس وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کا اختیار نہیں، اس کیس میں چیئرمین نیب نے وارنٹ گرفتاری جاری کیے۔ عدالت نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے درخواست مسترد کی، جبکہ دوسری جانب آصف علی زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور فیصلہ سنے بغیر عدالت سے چلے گئے۔ نیب کی ٹیمیں ذرداری ہاوس اسلام آباد اور پارلیمنٹ ہاوس پہنچ چکی ہیں جہاں سے جلد ان کو گرفتار کر دیا جائے گا۔ اس کے ساتھ ساتھ پولیس کی بھاری نفری بھی نیب ٹیم کے ساتھ موجود ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ آصف زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور زرداری ہاؤس میں موجود ہیں، جہاں آصف زرداری کی قانونی ٹیم سے مشاورت جاری ہے جس میں ان کی گرفتاری سے متعلق قانونی پہلوؤں کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔

دوسری جانب آصف زرداری کی ضمانت مسترد ہونے کے بعد زرداری ہاؤس جانے والے تمام راستے سیل کر دیئے گئے ہیں، مارگلہ روڈ سے ایف ایٹ کی جانب جانے والا روڈ بھی بلاک کردیا گیا۔ ارلیمنٹ کے باہر اور نیب دفاتر پر پولیس کی نفری تعینات کر دی گئی، پارلیمنٹ کے باہر اے ٹی ایس کمانڈوز اور انٹی رائٹس فورس تعینات کر دیئے گئے ہیں۔ حتمی بات یہی ہے کہ کچھ دیر میں نیب کی ٹیم آصف علی زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کو گرفتار کر لے گی، جس کے بعد حکومت پر دباو ڈالا جائے گا کہ ان کے پروڈکشن آرڈر جاری کئے جائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں