Facts About the National Flower of Pakistan 6

چنبیلی پاکستان کا قومی پھول ہے، آئیے اس پر چند دلچسپ حقائق جانتے ہیں

چنبیلی یا یاسمین پاکستان کا قومی پھول ہے۔ آئیے اس کے بارے چند دلچسپ حقائق جانتے ہیں

دنیا کے گرم اور مرطوب علاقوں میں پائے جانے والے اس پودے کی تقریباََ 200 اقسام ہیں، چنبیلی کی بیشتر اقسام کی جائے پیدائش جنوب مشرقی ایشیا میں ہوتی ہے، چند ایک کی افریقہ ہے جبکہ صرف ایک قسم یورپ میں ارتقا پذیر ہوئی۔ جنگل میں چنبیلی کا پودا 15 سے 20 برس عمر پاتا ہے۔ چنبیلی کے پودے کی اونچائی تقریباََ 10 سے 15 فٹ ہوتی ہے اور اگر پودے کو دیوار وغیرہ کی صورت میں سہارا میسر آ جائے تو اس کی اونچائی 30 فٹ تک ہو سکتی ہے۔ چنبیلی کے ایک پھول میں پانچ سے نو پتیاں ہوتی ہیں۔ پھول عموماً ایک انچ پر محیط ہوتا ہے۔ پھول زیادہ تر سفید یا زرد ہوتا ہے، تاہم بعض اقسام میں سرخی مائل بھی ہوتا ہے۔ پودے پر پھول گرما اور بہار میں آتے ہیں۔

چنبیلی کا پھول اپنی خوشبو سورج غروب ہونے کے بعد بکھیرتا ہے، خاص طور پر تب جب چاند بڑا ہو رہا ہو۔ پودے کا پھل پک جانے پر سیاہ رنگ کا ہو جاتا ہے۔ پھول سے حاصل کردہ تیل کو دوائیوں، کاسمیٹکس اور خوشبو بنانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ پودا اگنے کے عموماً چھ ماہ بعد اس پر پھول آنا شروع ہوتے ہیں۔ چنبیلی کا پھول سورج کی شعاؤں کے حوالے سے انتہائی حساس ہوتا ہے۔ دن کے وقت پھول توڑے جانے کی صورت میں اس کے مرجھا جانے کا قوی اندیشہ ہوتا ہے۔ چنبیلی کا پھول ہے تو پاکستان کا قومی پھول لیکن اس کی پیداوار دنیا کے مقابلے میں پاکستان میں بہت کم ہے، صرف مصر ہی وہ ملک ہے جو پوری دنیا کا 50 فیصد چنبیلی پیدا کرتا ہے اور پوری دنیا کو اس کا رس فروخت کرتا ہے، پاکستان میں اس کاروبار کی خستہ حالی کی ایک بہت بڑی وجہ نئی ریسرچ اور ٹیکنالوجی کا فقدان ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں