Success is one of the aspects of your own life 6

کامیابی آپ کی اپنی ہی زندگی کے ایک پہلو سے جڑی ہے

ایک دفعہ ﺍﯾﮏ ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﺍﭘﻨﮯ ایک ﻭﺯﯾﺮ ﮐﮯ ﺳﺎتھ ﺳﯿﺮ ﮐﺮ ﺭہا ﺗﮭﺎ کہ ﺍﭼﺎﻧﮏ ﺍﺱ ﮐﯽﻧﻈﺮ ﺍﯾﮏ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﭘﺮ ﭘﮍﯼ، ﺟﻮ ﺯﻣﯿﻦ ﺳﮯ ﺍﯾﻨﭧ ﭘﮭﯿﻨﮑﺘﺎ ﺍﻭﺭ ﻭﻩ ﺍﯾﻨﭧ ہوﺍ ﻣﯿﮟ ﻗﻼﺑﺎﺯﯾﺎﮞ ﮐﮭﺎﺗﯽ ہوﺋﯽ ﺗﯿﺴﺮﯼ ﻣﻨﺰﻝ ﭘﺮ جا پہنچتی. ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﻧﮯ ﺣﯿﺮﺍﻥ ہو ﮐﺮاپنے ﻭﺯﯾﺮ ﺳﮯ پوچھا کہ ﮐﯿﺎ ﻭجہ ہے کہ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺯﻣﯿﻦ ﭘﺮ ﮐﮭﮍﮮ ہو ﮐﺮ ﭘﮭﯿﻨﮑﯽ ہوﺋﯽ ﺍﯾﻨﭧ ﺗﯿﺴﺮﯼ ﻣﻨﺰﻝ ﭘﺮ پہنچ جاتی ہے…ﮐﯿﺎ یہ بہت زیادہ ﻃﺎﻗﺘﻮﺭ ہے؟؟

ﻭﺯﯾﺮ ﻧﮯ ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﺳﮯ ﻋﺮﺽ ﮐﯿﺎ کہ ﺣﻀﻮﺭ ﺍﺱ ﻣﯿﮟ ﻃﺎﻗﺖ ﮐﮯ ﺳﺎتھ ساتھ ﺍﯾﮏ ﺍﻭﺭ ﻋﻤﻞ بھی ﮐﺎﺭﻓﺮﻣﺎہے،ﺍﮔﺮ ﺟﺎﻥ ﮐﯽ ﺍﻣﺎﻥ ﭘﺎﺅﮞ ﺗﻮﻋﺮﺽ ﮐﺮﻭﮞ؟
ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ: ﮐﮩﻮ ﮐﯿﺎ ﮐﮩﻨﺎ ﭼﺎہتے ہو؟
ﻭﺯﯾﺮ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ: ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﺳﻼﻣﺖ،ﺿﺮﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﯽ ﮔﮭﺮﯾﻠﻮ ﺯﻧﺪﮔﯽ بہت ہی ﺍﭼﮭﯽ ﮔﺰﺭ رہی ہوگی،ﺍﺳﮯﮔﮭﺮ ﮐﯽ ﻃﺮﻑ ﺳﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﭘﺮﯾﺸﺎﻧﯽﻻﺣﻖ نہیں ہوگی. ﺍﺳﯽ وجہ ﺳﮯ ﺍﺱ ﮐﯽﺍﯾﻨﭧ ﺗﯿﺴﺮﯼ ﻣﻨﺰﻝ ﭘﺮ پہنچ جاتی ہے. ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ کہ اس کی ﺗﺤﻘﯿﻖ ﮐﯽ ﺟﺎﺋﮯ. ﻭﺯﯾﺮ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﺟﯽ ﺣﻀﻮﺭ.

اگلے ہی ﺭﻭﺯ ﻭﺯﯾﺮ ﻧﮯ ﭼﻨﺪ ﺍﻓﺮﺍﺩ ﮐﻮ ﺗﺤﻘﯿﻖ پر ﻟﮕﺎ ﺩﯾﺎ.چند دن ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﺍﻥ ﺍﻓﺮﺍﺩ ﻧﮯ ﺭﭘﻮﺭﭦ ﭘﯿﺶ ﮐﯽ کہ “ﺍﺱ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﮐﯽ ﺑﯿﻮﯼ بہت اچھی ہے وہ ﺷﺎﻡ ہوﺗﮯ ہی ﺍﭘﻨﮯ ﺷﻮہر ﮐﮯ ﺍﻧﺘﻈﺎﺭ ﻣﯿﮟﺑﯿﭩﮭﯽ رہتی ہے، ﺟﯿﺴﮯ ہی وہ شخص ﮔﮭﺮ ﻣﯿﮟ داخل ہوتا ہے ﺍﺱ ﮐﯽﺑﯿﻮﯼ ﻧﮩﺎﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﻓﻮﺭﺍ ﭘﺎﻧﯽ ﮐﯽﺑﺎﻟﭩﯽ ﺍﻭﺭ ﻧﺌﮯ ﮐﭙﮍﮮ ﺭﮐﮭﺘﯽ ہے،وہ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﺟﯿﺴﮯ ہی ﻧﮩﺎﻧﮯ ﺳﮯ ﻓﺎﺭﻍ ہوﺗﺎ ہے،یہ ﺍﺱ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﮐﮭﺎﻧﺎﻟﮕﺎﺩﯾﺘﯽ ہے، ﮐﮭﺎﻧﺎ بھی ﮐﻤﺎﻝ ﺍﺣﺘﯿﺎﻁ ﺳﮯ ﭘﮑﺎﺗﯽ ہے ﻧﻤﮏ ﻣﺮچ اور مصالحہ جات کے تناسبﮐﺎ ﺧﺎﺹ ﺧﯿﺎﻝ ﺭﮐﮭﺘﯽ ہے،ﮐﮭﺎﻧﮯﺳﮯ ﻓﺎﺭﻍ ہوﻧﮯ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ آرام کرنے ﮐﮯﻟﯿﮯ ﺑﺴﺘﺮ ﻟﮕﺎﺗﯽ ہے، ﺳﻮﻧﮯ ﺳﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﺷﻮﻫﺮ ﮐﻮ ﭘﯿﻨﮯ ﮐﮯ ﻟﯿﮯﺩﻭﺩﮪ ﺩﯾﺘﯽ ہے.اس کے ساتھ ساتھ وہ ﮐﺴﯽ ﭘﺮﯾﺸﺎﻧﯽ ﮐﺎ ﺫﮐﺮتک نہیں ﮐﺮﺗﯽ ﺍﻭﺭبہت ہی ﺻﺒﺮ ﺳﮯ ﮐﺎﻡ ﻟﯿﺘﯽ ہے”.

ﺟﺐ یہ ﺭﭘﻮﺭﭦ ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﮐﮯ ﺳﺎﻣﻨﮯ ﭘﯿﺶ ہوﺋﯽ ﺗﻮ ﻭﻩ بہت ﺣﯿﺮﺍﻥ ہوا…کچھ سوچنے کے بعد ﺍﺱ ﻧﮯ اپنے ﻭﺯﯾﺮ ﮐﻮ ﮐﮩﺎ کہ ﺍﻥ میاں بیوی ﮐﮯﺩﺭﻣﯿﺎﻥ کچھ ﺭﻧﺠﺶ اور چپقلش ﭘﯿﺪﺍ ﮐرﻭا دو، ﭘﮭﺮ ﺩﯾﮑﮭﯿﮟ گے کہ ﮐﯿﺎ نتیجہ نکلتا ہے.ﭼﻨﺎﻧچہ اَس ﻭﺯﯾﺮ ﻧﮯ خاتون کی ملنے جلنے والی عورتوں کی مدد سے ﺍﯾﺴﺎ ہی کروادیا.ﻭﺯﯾﺮ ﻧﮯ ان عورتوں کی مدد سے ﺍﺱ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﮐﯽ ﺑﯿﻮﯼ ﮐﮯ ﮐﺎﻧﻮﮞ ﻣﯿﮟ بات ڈالی کہ تمہارے ﺷﻮہر ﮐﮯ غیر ﻋﻮﺭﺗﻮﮞ ﺳﮯ ﻧﺎﺟﺎﺋﺰ ﺗﻌﻠﻘﺎﺕ ہیں. ﺑﺲ ﭘﮭﺮ ﮐﯿﺎ ہونا ﺗﮭﺎ. ﺷﺎﻡ ﮐﻮجیسے ہی وہ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﮔﮭﺮ پہنچا ﺗﻮ نہاﻧﮯﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﭘﺎﻧﯽ ﮐﯽ ﺑﺎﻟﭩﯽ تھی نہ ہیﮐﮭﺎﻧﮯ ﮐﺎ ﺍﻧﺘﻈﺎﻡ ہے اورنہ ہی ﺳﻮﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺑﺴﺘﺮ..ﺍﺱ ﻧﮯ اپنی ﺑﯿﻮﯼ ﺳﮯ ﻭجہ ﭘﻮﭼﮭﯽ ﺗﻮ ﻭﻩ ﻟﮍﻧﮯ مرنے ﮐﻮآ گئی،ﻣﺰﺩﻭﺭ ﻧﮯ بہت ﺻﻔﺎﺋﯽ ﭘﯿﺶ ﮐﯽ ﻟﯿﮑﻦ اسکی ﺑﯿﻮﯼ ﺗﮭﯽ کہ ماننے کو تیار ہی نہ ہوئی.

ﭼﻨﺪ ﺩﻥ یہ ﻗصہ ﯾﻮﮞﻫﯽ ﭼﻠﺘﺎ ﺭہا.ﺍﯾﮏ ﺩﻥ ﻭﺯﯾﺮ ﻧﮯ ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﮐﻮ ﮐﮩﺎ کہ ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﺳﻼﻣﺖ ﻫﻢ ﺳﯿﺮ ﭘﺮ ﭼﻠﺘﮯﻫﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﮐﯽ بھی ﺣﺎﻟﺖ ﺩﯾﮑﮭﺘﮯ ہیں تو ﺑﺎﺩﺷﺎﻩ ﻭﺯﯾﺮ ﺳﻤﯿﺖ ﺳﯿﺮ ﭘﺮ ﻧﮑﻼ ﺍﻭﺭجب ﺍﺳﯽ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﮐﮯ ﭘﺎﺱ ﭘﻬﻨﭽﮯ ﺗﻮیہ لوگ ﮐﯿﺎﺩﯾﮑﮭﺘﮯ ہیں کہ اب ﻣﺰﺩﻭﺭ ﻻکھ ﮐﻮﺷﺶ ﮐﺮﺗﺎ ہے ﻟﯿﮑﻦ ﺍﯾﻨﭧ پہلی ﻣﻨﺰﻝ ﺳﮯ ﺍﻭﭘﺮ نہیں ﺟﺎﺗﯽتھی.ﺑﺎﺩﺷﺎﺩﻩ اپنے ﻭﺯﯾﺮ ﮐﯽ ﻓﻬﻢ ﻭﻓﺮﺍﺳﺖ ﮐﻮﻣﺎﻥ ﮔﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﺳﮯ ﯾﻘﯿﻦ ہوﮔﯿﺎ کہ ﺍﯾﻨﭧ ﮐﻮ ﺗﯿﺴﺮﯼ ﻣﻨﺰﻝ ﭘﺮ ﻃﺎﻗﺖ ﻧﻬﯿﮟ بلکہ انسان کی ہی ﺧﻮﺷﮕﻮﺍﺭ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﭘﮩﻨﭽﺎتی ہے.
ﻗﺼﻪ ﻣﺨﺘﺼﺮ کہ پھر ﻣﺰﺩﻭﺭ ﮐﯽ ﺑﯿﻮﯼ ﮐﻮ ﺑﺘﺎﯾﺎ ﮔﯿﺎ کہ یہ ﺳﺐ ﺗﻤﻬﺎﺭﮮ ﺳﺎتھ ﮈﺭﺍمہ ﮐﯿﺎ ﮔﯿﺎﺗﮭﺎ، ﺟﺐ مزدور کی بیوی کو ﺣﻘﯿﻘﺖ ﻣﻌﻠﻮﻡ ہوئی ﺗﻮ ﻭﻩ ﺧﻮﺵ بھی ہوئی ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮاپنے ﺷﻮہر ﮐﯽ ﺧﺪﻣﺖ شروع ﺍﻭﺭپھر ﻭہی ﺍﯾﻨﭧ ﺗﯿﺴﺮﯼ ﻣﻨﺰﻝ ﭘﺮ.ویسے یہ تو کہانی ہے لیکن ﺣﻘﯿﻘﺖ بھی یہی ہےکہ ﺟﻮ ﺷﺨص ﮔﮭﺮﯾﻠﻮ ﭘﺮﯾﺸانیوﮞ ﺳﮯ ﺩﻭﺭ ہے ﺍﻭﺭﺟﻦ ﮐﮯ ﮔﮭﺮ ﻣﯿﮟ ﺧﻮﺷﺤﺎﻟﯽ ہو توﺗﺮﻗﯽ ان ﮐﮯ ﻗﺪﻡ ﭼﻮﻣﺘﯽ ہے.

ﻟﻬﺬﺍ ہمیں ﺑﮭﯽ چاہیے کہ اپنے گھر کا اور ارد گرد ﮐﺎ ﻣﻮﺣﻮﻝ ﺧﻮﺷﮕﻮﺍﺭ ﺭﮐﮭﯿﮟ…!!! تا کہ ہم بھی خوش رہیں اور خوشیاں بانٹیں۔

ماہا خان

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں